Issuu on Google+

‫نظام ِ حیات‬ ‫اسلم میں انسانی حقوق کا تصور‬ ‫ہاکٹر عبیدالہفلہد فلحی‬ ‫اسلمنشہ فرد کو فکرونظر کی پوری آزادی عطاکیشہ اسنشہ انسان کشو جشبری غلمشی‪ ،‬معاششی‬ ‫رشہشبیاکراشہ کی بندشوںسشہ پوری طرح آزادکیاشہ آج جدید دور میں فکشری‬ ‫استحصال‪ ،‬سیاسی جبر او مذ‬ ‫رشہشاجاتاششش ہہ‪ ،‬جشس‬ ‫سشہشرا فرانسیسی مفکر و فلسفی جان جاک روسو )‪۱۷۷۸‬ءششہ‪۱۷۱۲‬ء(کش ہس باند‬ ‫آزادی ک ا‬ ‫واشششش ہ ہہ درحقیقشتیشش ہُاس فرمشان‬ ‫کش اتشہشا‪ :‬انسان آزادپیداش ہ و اتشہشا مگر آجوشششہ ہرجگشہ زنجیروں میںجکڑاش ہ‬ ‫نشہ شہ‬ ‫شبازگشتششش ہہ‪ ،‬جو امیرالمومنین حضرت عمر بن خطشابنششہاپنششہ گشورنر مصشر حضشرت عمشرو بشن‬ ‫کیصداشہ‬ ‫فرمایاتششا‪’’ :‬تشمنششہ کشبسششہ لوگشوں کشو غلم بنانشا‬ ‫ہ شہ‬ ‫شاشہ حضرت عمر نش‬ ‫العاص کوتنبیشششہہکرتشششہ ہوئشہ جاری کیتشاہ‬ ‫انشہشیں آزاد جن اتشہشا؟‘‘‬ ‫شروع کر دیاحالنکش ہُان کی ماؤں نشہ ش‬ ‫ی ضمیر کشی خشاطر انسشانکششہ ششعور احسشاس کشو بیشدار کیشا اور قشانون سشازیکششہ‬ ‫اسلمنشہ آزاد ِ‬ ‫ذریع شہ خارجی حالت کوبشہشی سازگاربنایشاشہاللششہ پشر ایمشان‪ُ ،‬امشتمسشلمشہ کشی وحشدت‪ ،‬افشرادکششہ انشدرذمششہ‬ ‫داریوںکشہ اشتراک کا تصشور‪ ،‬سشاری انسشانیت کشی وحشدت اوراس‬

‫بشاشہشمی کفشالت کشا اصشول‪،‬یششہوشہ‬ ‫میش ں‬

‫کرتاشششش ہہہ‬ ‫ی ضمیر کانعرشہ بلند‬ ‫بنیادیقدریںش ہیں جن پر زوردشہ کر اسلم کامل آزاد ِ‬ ‫کرتشاشششش ہ ہہوشہ‬ ‫عقیدشہ توحیدکشہذریع شہ قرآن انسانی ضمیر کوغیراللشہ کشی عبشادت و اطشاعتسششہ آزاد‬ ‫ذہششن نشینکراتاششش ہہکشہاللشہکشہ سوا کسیدوسرشہ کو انسان پر اقتشدار‬ ‫اس فکر ک و‬

‫شیشںشششش ہ ہہاللششہکششہ‬ ‫حاصشلہ‬ ‫نش‬

‫شنچشانشہ کشی‬ ‫نہ‬ ‫نقصاپش‬

‫شتشاشہ اس‬ ‫ںہ‬ ‫قشدرت نہششیشرکش‬

‫سوا‬

‫جلتاش ہوشہ کوئی دوسرا نفع یا‬ ‫کوئینشہشیں جواسشہ مارتا ِ‬

‫کائنات میں‬

‫شبندشششہ ہیں مجبور اوربششہ‬ ‫شستیششش ہہ جو رزق عطاکرتیششش ہہ اسکشہ سوا سب اسکشہ‬ ‫وشہشیایکش ہ‬ ‫س‬ ‫ب‬

‫بسششہ‬ ‫اسلمنشہ نبیوں کوبشہشییش ہ حقنشہشیں دیاکشہ ان کی پرستش کیجائشہ یا ُانکشہ تئیں مراسشم ِ عبشودیت‬ ‫ق‬ ‫بجالئ شہجائیںشہاللشہ رب العزت رسولاللشہ صلیاللشہعلیشہ وسلم کو حکمدیتاششش ہہکشہوشہ اپنشی پوزیششن خلش ِ‬ ‫خداکشہسامنشہ واضح کردیں اور اپنا درست موقفعلنیشہ پیش کر دیں‪:‬‬


‫اشہ‬

‫کہششوکشہ میں تواپنشہ رب کوپکارتا ش ہوں اور اسکشہساتشہ کسی کو‬ ‫نب!ی‬

‫شتاش ہوںنششہ‬ ‫رہ‬ ‫تم لوگوںکشہلیشہنشہ کسی نقصان کا اختیارکش‬

‫کشہشو میں‬ ‫شریکنشہشیں کرتاشہ ش‬

‫مجشششہ ہاللششہ کشی گرفشتسششہ‬ ‫کششو‬ ‫کسشیبشہشلئی کشاشہ شہ‬

‫کوئی بچ انشہشیں سکتا اورنشہ میں اسکشہ دامنکشہ سوا کوئیجاشہپناشہپاسکتاش ہوںشہ )الجن ‪۷۲:۲۰‬ہ‪(۲۲‬‬ ‫لگاتشاششش ہ ہتشاکشہ انسشان ششرکسششہ پشوری طشرح‬ ‫ب کشاری‬ ‫قرآنش ہر طرحکشہ تقدس او ُ ر‬ ‫الوشہشیت پر ضشر ِ‬ ‫دیتشاششش ہ ہ اور آخرکشار‬ ‫محفوظششششہہہ شرک کاعقیدشہ انسانکشہ ضمیر کو کچل دیتا اور اسکشہ وجدان کشو دبشا‬ ‫ر‬ ‫دیتاشششش ہہہ اسلم کا پورا زور اس باتپرششش ہہک شہبندشہ اور‬ ‫اسشہاللشہکشہبندوںش ہی میںسشہ کسی کابندشہ بناکررکشہ‬ ‫اللشہک شہ درمیانبراش ِہ راست تعلقمستحکمش ہوشہ‬ ‫ش‪،‬ش ہرقسم‬ ‫رہ‬ ‫انسانی ضمیر بندوں کی غلمیسشہآزادش ہوکر اور خداسشہبراش ِہ راسترابطشہ قائم ککش‬ ‫وجاتشاشششش ہ ہہ جشان و مشال اور ششرف و کرامشت کشو لحشقخطشرشہ‬ ‫کشہ اندیشوں‪ ،‬خطرات‪ ،‬وسوسوںسشہبلنشدش ہ‬ ‫ت نفس کو مجروح کشردیتشششہ ہیشں‪ِ،‬اسششہ ذلشت کشو انگیشزکرنششہ اوراپنششہ‬ ‫انسان کی خودداری اوراس کی عز ِ‬ ‫چشہشیشن‬ ‫جائز حقوقسشہ دستبردارش ہوجانشہ پر مجبورکردیتشششہ ہیں اوررفتشہرفتشہ اس کشی انسشانیت کشوہ بششی‬ ‫کرتشاششش ہ ہ اور انسشانوں‬ ‫ت نفس اور خودداری کی حفاظتکرنشہ کی تلقین‬ ‫لیتشششہ ہیںشہاسلمش ہرقیمت پر عز ِ‬ ‫کشہ عزوشرف کی‬

‫کششششہ ہاتشہ‬ ‫کرتاششش ہ ہکششہ زنشدگی خشدا‬ ‫ذشہشن نشین‬ ‫کرتاشششش ہہہوشہیشہعقیدشہ انسان کشہ ش‬ ‫فراہششم‬ ‫ضمان ت‬

‫میںشششش ہہہ‬

‫تاریخ‬

‫ششہشادت‬ ‫کی‬ ‫شنمشودارشش ہ وا جشسکشاشش ہ ر فشرد‬ ‫اسلم کی ِان تعلیمات اور اقدارکششہنشتیجشہ میشں ایشک ایسشامعاششرشہ‬

‫ر حق میشں‬ ‫ت نفسسشہ مال مال ‪،‬‬ ‫ی ضمیر کا نمونشہت ششاہشہ کیا حکمراں‪ ،‬کیا رعایا‪ ،‬سب خوددار‪ ،‬عز ِ‬ ‫آزاد ِ‬ ‫اظشہشا ِ‬ ‫انہششیں کوئی للچ یا خوف‬ ‫باکششش ہہہ ش‬ ‫ت‬ ‫جری وبشہ‬

‫شاشہ امام ابویوسفنشہ کتشاب الخشراج میشں‬ ‫بزدلنشہشیں بناسکتتشاہ‬

‫حضرت عمر فاروق کایشہواقعشہ نقلکیاششش ہہ‪:‬‬ ‫ہ حضرت عمر نہ اپنہ گورنروں کو‬

‫نہیجا کہ وہ حج کہ موقع پر مک ّہ میں ُان سہ آکر ملیںہ‬ ‫فرماب‬

‫مال کشو اسلیششہ مقشررکرتشاشش ہ وںکششہ‬ ‫جب سبجمعش ہوگئشہ تو حضرت عمرنشہ تقریر کی‪’’ :‬لوگو! میں ان ُ‬ ‫ع ّ‬ ‫کیشاششش ہ ہ‬ ‫انشہشیں اسلیشششہ ہرگز مقر رنشہشیشں‬ ‫راست َرویکشہ ساتش ہتمشہششاری سرپرستی اور حفاظتکریںشہ میں نشہ ش‬


‫لششذا اگشر تشم میشںسششہ کسشی کشو کسشی‬ ‫کش ہتمششہشاری جان و مال اور عزت و آبشرو پشر دسشت درازی کریشںشہ ہش‬ ‫شڑاش ہوجائشششہ‘‘ہ‬ ‫وہ‬ ‫عاملکشہ خلف ظلم و زیادتی کیشکایتش ہو تکش‬ ‫کششا‪ :‬امیرالمشومنین! آپکششہ گشورنرنششہ‬ ‫لوگوںکشہ درمیانسشہ ایک شخصآگشہ نکل کشر آیشا اور اس نشہ شہ‬ ‫مجشششہہ ناحق ‪ ۱۰۰‬کوڑہ مارہ ہیںہ‬ ‫حضرت عمرنشہ فرمایا‪ :‬کیا تماسشہ ‪ ۱۰۰‬کوڑہ مارنچااہتہ ہو؟ آؤ اور اس سہ انتقام لوہ‬ ‫اس پر حضرت عمرو بن‬

‫انشہشوںنششہ احتجشاج کیشا‪ :‬امیرالمشومنین! اگشر آپنششہاپنششہ‬ ‫وگئ ش ہہ ش‬ ‫شڑہشششہ ہ‬ ‫ص‬ ‫العاکش‬

‫انشہشیں سخت گراںگزرشہگاشہیشہ ایک مستقلطریق شہ بشنجشائشہ گشا‬ ‫گورنروںکشہساتشہیشہ عمل شروع کر دیا ت و‬ ‫جس پر آپکشہ بع دبشہشی لوگ عمل کریںگشششہہ‬ ‫حضرت عمرنشہ فرمای‪ :‬اپشہشر کیا میں ِاس آدمی کوبدلشہنششہ دلشواؤں‪ ،‬جشبکششہ میشںنششہاللششہکششہ رسشول‬ ‫شر ُاس آدمی کو خطشاب کشرکششہ حکشم دیشا‪:‬‬ ‫دیکششاششہشش ہہہ شپشہ‬ ‫صلیاللشہعلیشہ وسلم کو خود اپنی ذاتسشہبدلشہ دلواتش ہ‬ ‫آؤ اور اس گورنرسشہبدلشہلوشہ عمرو بن العاصنشہ درخواست کیکشششہ ہمیں اجشازتدیجیششہکششہ اس آدمشی کشو‬ ‫اجازتشششش ہہہ ان لوگوںنشہ مظلوم کو ‪ ۲۰۰‬دینار کہ بدلہ میں راضی‬ ‫راضیکرلیںشہ حضرت عمر نشہ شکہش ‪:‬تماشہشیں‬ ‫کرلیاششہ‬ ‫ن تقریر آپ نہ‬ ‫ہ حضرت عمر ہی کا دوسرا واقعہ ہ ہہ آپ مسجد میں خطاب فرما رہ ہ تہ ہہ دورا ِ‬ ‫فرمایاکشہ لوگو‪ ،‬اگرمیرشہ اندر کشوئی‬

‫دیکششو تشومجشش‬ ‫کجش یہ‬

‫کشہشا‪ :‬عمر!اگرش ہمنشہتیرشہ اندر کوئی‬ ‫شڑاش ہوا‪ ،‬اس نشہ ش‬ ‫صہ‬ ‫شخکش‬

‫سشیدشہشاکردینشا شہ نمشازیوںکششہ درمیشانسششہ ایشک‬ ‫ہہ ش‬ ‫یشہشی تو اپنشی تلشوار‬ ‫کج دیک‬

‫تجشششہ ہ‬ ‫دششارسششہ‬ ‫کشیہ‬

‫ششکرششش ہ ہ جشسنششہ عمشر کشی رعایشا میشںایسششہ‬ ‫سیدشہشا کردیںگشششہہ حضرت عمرنشہ صرف اتنا فرمایشا‪:‬اللششہ کشا‬ ‫ہ ہہ‬ ‫افرا دبشہشی پیداکیشششہ ہیں جوُاسشہ اپنی تلوار‬

‫سیدشہشاکرسکتشششہ ہیںشہ‬ ‫دشہشار سش ہ‬ ‫کی‬

‫مشششور محشدث‬ ‫سشامنشششششہ ہ ہہ شہ‬ ‫ہ عباسی خلیفہ ابوجعفر منصور )م ‪۱۵۸‬ہ‪۱۷۷۵/‬ء( کشیمثشالش ہمشارشہ‬ ‫سفیان ثوری اسکشہ دربار میں جاکراسشہ نصیحتکرتشششہ ہیں‪ :‬امیرالمومنین! آپنششہاللششہ اور ُامشتمحمشدیشہ‬ ‫کیاشششش ہہہ آپ اس کی کیاتوجیشششہہکرسکتشششہ ہیں؟ حضشرت عمشرنششہ‬ ‫کا مال ُان کی مرضی و اجازتکشہ بغیر خرچ‬ ‫سشاتششہشیوں پشر ‪ ۱۶‬دینار خرچ ہ و ہہانئہ وں نہ محاسبہ کیا اور‬ ‫ایک بار حشج کیشا جشس میشں ُان پشر اور ان کش ہ‬


‫اچشہشی طشرح معلشوم‬ ‫دیاشششش ہہہ امیرالمومنین! آپ ک و‬ ‫فرمایا‪ :‬میراخیالششش ہہکشششہ ہمنشہ بیت المال پرزیاد شہبارش ہال‬ ‫ہہ کہ منصور ابن عمار نہ ہم کو کیا حدیث سنائی ہہ کیونکہ آپ اس مجلس میں موجود تہ ہ اور سب سہ‬ ‫شاشہ رسولاللشہ صلیاللشہعلیشہ وسلمنشہ فرمایا‪’’ :‬اللشہ اور اسکشہ رسشولکششہ‬ ‫شلشہآپش ہینشہاسشہ قلم بند کیتشاہ‬ ‫پشہہ‬ ‫مال میں‬

‫مقدرشششش ہہ‘‘ہ‬ ‫جشہشنم‬ ‫یشہششکشہ مطابق تصرفاتکرنشہوالشہکچشہلوگش ہیں جنکشہلیشہ کل کو نا ِ ر‬ ‫اپن خوا‬

‫یشہ سن کر ابوعبید نامی ایک کاتب جوخلیفشہ کا مقرب‬

‫صتشہشا‪،‬‬ ‫خا‬

‫ُ‬ ‫اٹشہشا‪ :‬امیرالمشومنینسششہ اس‬ ‫بول‬

‫کشہشا‪’’ :‬خشاموش‪ ،‬فرعشوننشششہ ہامشانکشوش ہلک کیشااورش ہامشاننششہ‬ ‫انٹ ک ر‬ ‫ثوریشششہ ہ‬ ‫ن‬ ‫انداز میں گفتگو؟ سفیان‬ ‫شآئشششہہ‬ ‫باشہشرچلشہ‬ ‫فرعونکوش‘‘ہ او رپشہشر سفیان ثوریغصشہ میںُاٹش ہ ک ر‬ ‫ع دنیا‬ ‫جابربادشا شہکتناش ہیخودمختارش ہو‪ ،‬کسیایسشہ شخصپرش ہاتشہنشہ‬ ‫شیںش ہال سکتا جو دنیا اور متا ِ‬ ‫کو‬

‫اپنیٹہششوکروں‬

‫شتاش ہو اور ضروریاتسشہبلندش ہوکراللشہکشہلیشہفارغش ہوشہ‬ ‫ںہ‬ ‫میرکش‬

‫مذشہشبی جبر کی مخالفت‬ ‫ہہ‬ ‫کرتشاششششہہہیششہ‬ ‫شیجاش ہوا آخریدینششش ہہ جو انسانوںکشہ تمام مسشائل کشا حشل پیشش‬ ‫بلشبشششہہ اسلماللش ہ کبشاہ‬ ‫تششذیبوں میشں انسشانوں‬ ‫خ انسانیکشششہ ہر دور میں مختلف انبیا مختلف قومشوں او رہ‬ ‫ہوشہیدینششش ہہجسشہ تاری ِ‬ ‫کی اصلحوش ہدایتکشہلیشہ پیشکرتشرہششششہہہ ان شریعتوں کوماننشہ والوںکشہ درمیان قوانین میںاختلفش ہوا‬ ‫کشششہ ہردورکشہ حالت اورتقاضشہ‬

‫شش‪ ،‬مگر دیشن اپنشی روحکششہ اعتبشارسششہ اور اپنشی مجمشوعی حیشثیت‬ ‫فتشہہ‬ ‫مختل‬

‫یشاہش ہُاسی دین کی تبلیغ و اشاعتکشہلیشہ حضرت آدم تشریف لئہہ حضرت نوح مبعوث ہوئہہ‬ ‫میں ایکشہ شرش‬ ‫تشہشیم‪،‬‬ ‫حضر ابرا‬

‫موسی ‪،‬‬ ‫حضر ہت‬

‫عیسی غرضیشہکشہسارشہ نبی ایک ایککرکشہ اپنی قوم میشںآتششہ‬ ‫حضر ہت‬

‫رشششہہ اور وحدانیت کا پیغامدیتشرہششششہہہ‬ ‫والشیششش ہ ہُان تعلیمشات‬ ‫سورشہمائدشہ میں قرآن کی دو صفاتبیانش ہوئیش ہیں‪:‬یشہ کتاب تصشدیقکرنششہ‬ ‫شبانشششش ہہہ )‪(۵:۴۸‬‬ ‫نگش رہ‬ ‫شلشہ الکتاب میںسشہموجودش ہیں‪ ،‬اور اس کی محافظ او‬ ‫کی جو اس سشہپ شہ‬ ‫پچشہشلشی آسشمانی کتشابوں کشی‬ ‫قشرآ ن‬

‫کرتشاششش ہ ہ اور جشو تحریفشات اور تبشدیلیاں ُانکششہ‬ ‫بششی‬ ‫تصشدیقہ‬

‫شیں ُان کی‬ ‫دیتشہ‬

‫بچاتشاشششش ہ ہہ مگشر‬ ‫ع انسشانی کشو‬ ‫نشانہ‬ ‫دششی کرتشا اور ُانسششہ نشو ِ‬

‫پیروکاروںنشہ انکشہ اندر کر‬

‫امتیازشششہ ہہکشہوشہ کسی شخص پراپنشہعقیدشہ کو‬ ‫یش‬ ‫قرآن کا‬

‫تفشہشیشم اور تعلیشم و‬ ‫افششا م و‬ ‫مسلطنشہشیںکرتاشہ وشہ شہ‬


‫کردیتشاشششش ہ ہہ اپنشی صشداقت‬ ‫دشہشاندلی کو بالکل مسشترد‬ ‫س‬ ‫اکراشہش‪ ،‬تشدد او رہ دششون‬ ‫تلقین کاقائلششش ہہ اور جب ر ِ و‬ ‫اور حقانیت پر پوری طرحمطمئنش ہونشہکشہ باوجودوشہ اعلنکرتاششش ہہکشہ‪’’ :‬دینکششہمعشاملشہ میشں کشوئی جشبر‬ ‫شیںشششش ہہ‘‘ہ )البقرشہ ‪(۲:۲۵۶‬‬ ‫نش ہہ‬ ‫اسلمنشہ دنیا‬

‫شچشاشششہہ‬ ‫میںپشہشلیبارش ہرشخص کویشہ آزادی عطا کیکشہ کفروایمان میںسششہ جشورا شہوشہ‬

‫اختیارکرشششہہمکشہکشہ ‪ ۱۳‬سالہ دور میں مسلمانوں نہ ہر ظلم و جبر کو برداشت کیا‪،‬‬

‫یہبی آزادی کہ‬ ‫ِاسمذ‬

‫رششاشہ مسشلمانوںنششہیششہ حشق جشس طشرحاپنششہلیششہ‬ ‫حق کو حاصلکرنشہکشہلیشہ اور بشالخریششہ حشقحاصشلشش ہ وک رہ‬ ‫حاصل کیا‪ ،‬اسی طرح دوسروںکشہ لیشہ شبشہشی اس کا پورا پورا اعترافکیاشہ‬

‫وسق رومی کاواقعشہ‬ ‫ہہشاںخلیفشہ ثانی حضرت عمرکشہ دور کا ایکواقعشہ نقل کرنامفیدش ہوگاشہیششہواقعشش ہُاس ششخص کشا‬ ‫یش‬ ‫ہہ جو دنیا کی‬

‫کہت بڑی مملکت کا سربرہتاہاہ جس کہ جلل و جبروت کا یہ‬ ‫ایب‬

‫کی دوعظیم طاقتیں اسکشہ ذکرسشہ‬

‫عالمہا کہ روم و فارس‬ ‫ت‬

‫سشامنشششہ ہانپت شہکشانپتشہ حاضشر‬ ‫شیشںشہ ملشوک و سشلطین اسکششہ‬ ‫یہ‬ ‫لرزتتش‬

‫ہ وہت تہہ‪ ،‬مگر وہ مقتدر اور باجبروت شخص اپنہ غلم کمذاہب اپنی مرضی کہ مطابق تبدیل نہ کرسکاہ‬ ‫علم شہ ابوبکر جصاص احکام القرآن میں اسواقعشہ کو بیانکرتشششہ ہیںش‪ :‬ہلل الکائی روایتکرتشششہ ہیں وسق‬ ‫فشہشمشایش کشیکششہ اسشلم قبشول‬ ‫انشہشوںنششہمجششہ سشہ ش‬ ‫شاشہ ش‬ ‫مشہ‬ ‫سشہش‪،‬وشہ بیانکرتشششہ ہیںکشہ‪ :‬میں عمر کا غل ت‬ ‫الروم ی‬ ‫کرلشششہہ اگر تومسلمانش ہوجائشہ تو مسلمانوں کی امانتکشہسلسلشہ میں تو میرامشددگارش ہوجشائ شہ گشا‪،‬کیشونکشہ‬ ‫مسلمانشششہ ہو ُاسسشہیشہ کام لینا‬ ‫ن‬ ‫جو شخص‬

‫شیںشششش ہہہ مگر میںنشہ اسلم قبولکرنششہسششہ انکشار کشر‬ ‫مناسبہ‬ ‫نش‬

‫ن )دیشن میشں کشوئی زور‬ ‫دیا شہ آپنشہ فرمایا َ‪:‬لا ِک َْراش َ ہ ِ‬ ‫فی الشدّی ْ ِ‬

‫ت مشرگ‬ ‫زبردسشتیہ‬ ‫نش‬ ‫شیشںشششش ہ ہ(ہ جشب آپ کشا وقش ِ‬

‫جشہشاں جیچاشششہہ چلجاش‘‘ہ‬ ‫شمجشششہہ آزاد کر دیا اور فرمایا‪ ’’ :‬تیر ا‬ ‫قریب آیا تو آپنشہ‬ ‫اسلمکشہنظریشہ رواداری‬

‫کیبشہشترین ترجمانی قرآن پاک کییشہ آیتکرتیششش ہہ‪:‬‬

‫ن َ‬ ‫ن الّر ْ‬ ‫ی )البقششرشہ ‪ (۲:۲۵۶‬دین کہ معاملہ میں کوئی زور‬ ‫ن ال ْ َ‬ ‫َلا ِک ْشَراش َہ ِ‬ ‫ش شد ُ ِ‬ ‫م َ‬ ‫قشدْت ّب َی ّ َ‬ ‫غش ّ‬ ‫فششی الشدّی ْ ِ‬ ‫شیںشششش ہہہ صحیح بات غلط خیالتسشہ‬ ‫زبردستیہ‬ ‫نش‬

‫گئیشششش ہہہ‬ ‫چشہشانٹ کررکشہ دی‬ ‫الگ‬


‫رکشہشیگئیششش ہہ اورو شہ نظشام ِ زنشدگی‬ ‫عقیدششششہ ہہ جس کی بنیاد خالصتا ً توحید پ ر‬ ‫ہہشاں دینسشہ مرادوشہ‬ ‫یش‬ ‫ہہ جو اس عقیدہ پر بنتا ہہہ اللہ کا واضح فرمان ہہ کہ اسلم کا یہ عقیدہ اور اس کا اعتقادی‪ ،‬اخلقی اور‬ ‫شیشںششش ہ ہ جشو کسشیکششہ سشر جشبرا ً‬ ‫زبردستیہ نششیںٹشہشونساجاسکتاشہیشہ ایسی چیزشہ نشیہ‬

‫عملی نظام کسی پر‬ ‫ششیجاسکشششہہ‬ ‫ہہہ‬ ‫ہمنش‬

‫قرآن کی وسیع المشربی‬ ‫وہششب کششی آزادی‪،‬دوسششرشہ مششذاب ‪،‬تہشششذیبوں اور روایششاتکشششہ تئیششں وسششیع المشششربی و‬ ‫عقیششدشہ ش مششذ‬ ‫رواداری اسلم کی‬

‫ایکاہششم ترینقدرششش ہہ جس پر قرآن کریمنشہ مختلف انداز میں اور متنوعپیرایششہ میشں‬

‫دیاشششش ہہہ قرآن اعلنکرتاششش ہہ‪:‬‬ ‫زور‬ ‫ہم نہ تم انسانوں میں سہ ہر ایک کہ لیہ ایک شریعت اور ایک راہ ِ عمل مقرر کی ہ ہہ‬ ‫خد چااشہشتا تو تم سب کو ایک‬ ‫کودیاششش ہہ اس‬

‫رہ ارا‬ ‫اگ تم‬

‫ُامتبشہشی بنا سکت اتشہشا‪ ،‬لیکن ُاسنشہیشہ اسلیشہ کیاکشہ جوکچش ہُاسنشہ تم لوگوں‬

‫ںشہشاری آزمایشکرشششہہ)المائدشہ ‪(۵:۴۸‬‬ ‫می تم‬

‫ہر ُامت کہ لیہ ہم نہ ایک طریق عبادت مقرر کیا ہ ہ جس کی وہ پیروی کرتی ہ ہ‪ ،‬پس اہ نبی‪ ،‬وہ‬ ‫جشہشگڑانشہ کریں تماپنشہ رب کی طرف دعوتدوشہ)الحج ‪(۲۲:۶۷‬‬ ‫ِاسمعاملشہ میں تم سشہ ش‬ ‫قرآن کریمنشہیششہ‬

‫بششی کشر دیکششہ اگشراللششہ‬ ‫صشراحتہ‬

‫یششششہ ہ وتیکششہ اس کشی زمیشن میشں‬ ‫یشہشش‬ ‫کش خشوا‬

‫تششاکششہ تکشوینی جشبرسششہ کشاملششہ کشر‬ ‫یشششہ ہو تو اسکشہلیشہکچشہ مشکل نشہ شہ‬ ‫کفرونافرمانی کاسرشہسشہوجودش ہ ن‬ ‫چاشہشتشا‬ ‫شنش ا‬ ‫رکشہ‬ ‫ب ایمان بنادشششہہ مگروشہ ایمانلنشہ یانشہلنشہکشہمعاملشہ میںسارشہ انسانوں کو آزا د‬ ‫سب کو صاح ِ‬ ‫ہہ اور اسی لیہ نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کو خطاب کر کہ اللہ نہ وضاحت فرما دی کہ نبی کی ذمہ‬ ‫مطلوبشششش ہہہ فرمایا‪:‬‬ ‫شیںششش ہہ اورنشہاللشہ کو جبری ایمان‬ ‫یہ‬ ‫داری کسی کو زبردستی مسلمانبنان ش ہ نکش‬ ‫شآئشششہ ہوت شہہ شپشہشر کیا تو لوگشوں کشو مجبشور‬ ‫ل زمین ایمانلشہ‬ ‫ی‬ ‫اگرتیرشہ رب کی‬ ‫مشیتشششہ ہوتی تو سارشہ شاشہ ِ‬ ‫کرشہ گاکشہوشہمومنش ہوجائیں؟)یونس ‪(۱۰:۹۹‬‬


‫اسلمنشہ صرف نبی آخر الزماں صلیاللشہعلیشہ وسلم پر ایمانلنشششہ ہی کو واجشب قشرا رنشہشیشں دیشا‪،‬‬ ‫شیجشششہ ہوئشہ تمام نبیوں اور پیغمبروں پشر ایمشانلئشہ اور‬ ‫کشہش شہ‬ ‫بلکشہ ایک مسلمانکشہلیشہ لزم قرار دیاکشہوشہاللشہ ب‬ ‫ان کی صداقت و حقانیت کو تسلیمکرشہ اور ُانکشہ درمیان اس لحاظسششہ کشوئی تفریشقنششہکشرشہکششہ فلں‬ ‫نبی حق پرتشہشا اور فلں حق پر نشہ شتشہشا‪ ،‬یایشہکشہوشہ فلں کومانتاششش ہہ اور فلں کونشہشیںمانتا شہ خشدا کشی طشرف‬ ‫طشرفبلنششآئشششہہ اب جشو‬ ‫ہ‬ ‫آئشہش‪ ،‬سبکشہ سبایکش ہی صداقت اورایکش ہیراش ِہ راست کشی‬ ‫سشہجتنشہ پیغمبر ہبششی‬ ‫شیشں شہ جشو لشوگ کسشی‬ ‫شخص حقپرستششش ہہُاسکشہلیشہ تمام پیغمشبروں کشو برحشق تسشلیمکیششہ بغیشر چشارشہن شہ‬ ‫انششوںنشش ہُاس‬ ‫پیغمبر کومانتشہ اور کسی کا انکارکرتشششہ ہیںوشہ حقیقت میں کسی پیغمشبر کشونشہشیشںمشانت ش ہہ شہ‬ ‫ط مستقیم کونشہشیں پایاجسشہ‬ ‫عالم گیر صرا ِ‬

‫موسی یا‬ ‫حضر ہت‬

‫عیستی یا کسی دوسرہ پیغمبر نہ‬ ‫حضر ہ‬

‫یںش ہُان کشا‬ ‫مانششششہہ ہ‬ ‫پیش کی اتشہشا‪،‬بلکشہوشہ محض باپ دادا کی تقلید میں ایک پیغمبر کو ر‬ ‫اندشہشیتقلیدششش ہہ‪،‬نشہکشہ کسی پیغمبر کیپیرویشہ‬ ‫ک ی‬

‫پرستی کا تعصب اور آبا و اجداد‬

‫مشذشہشب نسشل‬ ‫اصش ل‬ ‫شتاششش ہہ‪:‬‬ ‫قرآنہ‬ ‫کش‬

‫نشازلششوئیششش ہ ہ اور جشو‬ ‫ہ‬ ‫کشہشوکشششہ ’’ہم ایمانلئشہاللشہ پر اورُاسش ہدایت پرجوش ہماری طشرف‬ ‫مسلمان! و‬ ‫ہہشیم ‪ ،‬اسماعیل ‪ ،‬اسحق ‪ ،‬یعقوب اور اولِد یعقوب کشی طشرفنشازلشش ہ‬ ‫ابراش‬ ‫ہہہ‬ ‫عیسی اوردوسر شہ تمام پیغمبروں کو ُانکشہ رب کی طرفسششہ دی‬ ‫ہ ہہ‬

‫موسشی اور‬ ‫تششی اور جش ہ و‬ ‫وئیہ‬

‫تششیشششہ ہم ُانکششہ درمیشان کشوئی‬ ‫گئیہ‬

‫تفریقنشہشیںکرتشہاورش ہماللشہکشہمسلمش ہیںش‘‘ہ )البقرشہ ‪(۲:۱۳۶‬‬ ‫ذشہشن میں اس تعلیشم کشو راسشخ‬ ‫قرآن نبی کریم صلیاللشہعلیشہ وسلمکشہواسطشہسشہ مسلمانوں کشہ ش‬ ‫شیجششگئشششہ ہیشں اور کوتشوال اورداروغششہ بنشاکرنشہشیشں‬ ‫کرہ ہ‬ ‫شتاششش ہہکشہوشہ اس دنیا میں داعی اور مبّلغ بنا بش‬ ‫کرنچاشاہ‬ ‫شگئششش ہہُان کا کام لوگوں کو‬ ‫شیجش ہ‬ ‫بشہہ‬ ‫راست پر لنا ُان کا‬

‫شانشاششش ہ ہزبردسشتیشش ہاتشہ پکشڑ کش‬ ‫دکشیہ‬ ‫روشن‬

‫یشہشی کسشی کشوراش ِہ‬ ‫نخشوا‬ ‫خشواش ہ‬ ‫ر‬

‫شیںششش ہہ‪:‬‬ ‫نہ‬ ‫مشش‬ ‫ن‬

‫شرکنششکرتشششہہ تشم کشو‬ ‫ہ‬ ‫اگراللشہ کیمشیتش ہوتی تو )وشہ خود ایسا بندوبست کرسکت اتشہشاکشہ(یشہ لوگ‬ ‫ہم نہ ان پر‬

‫نہیں مقرر کیا ہہ اور نہ تم ان پر حوالہ دار ہوہ اور )اہ مسلمانو!( یہ لوگ اللہ کہ سوا‬ ‫پاسبان‬

‫جششالت کشی بنشا پشراللششہ‬ ‫ایساشششہ ہوکشہیشہ ششرکسششہآگششہبشڑشہ کش رہ‬ ‫ن‬ ‫کشہشیں‬ ‫انشہشیں گالیاںنشہ دو ‪،‬‬ ‫پکارتشششہ ہ یں‬ ‫جن کو‬ ‫انشہشیشںاپنششہ‬ ‫دیاششش ہہہ ش پہش ر‬ ‫شلگیںشششہ ہمنشہ تو اسیطرحش ہرگروشہکشہلیشہ اسکشہ عمل کو خوش نما بنا‬ ‫کوگالیاںدینشہ‬ ‫انشہشیں بتادشہ گاکشہوشہ کیاکرتشرہششششہہ ہیںشہ)النعام ‪۶:۱۰۷‬ہ‪(۱۰۸‬‬ ‫ربش ہی کی طرف پلٹ کرآناششش ہہ‪ُ ،‬اس وقت وشہ ش‬


‫رواداری کی نبوی مثال‬ ‫خ‬ ‫طیبشش‪،‬خلفشاشہ راششدین کش ا‬ ‫رسول اکرم صشلیاللششہعلیششہ وسشلم کشی سشیر ِ تہ‬ ‫عشہشدمسشعود اور تاریش ِ‬ ‫بششی‬ ‫حشتیکششہ دششمنوں سشہ شہ‬ ‫ہ‪،‬‬ ‫مذاششہشبکشہماننشہ والوں‬ ‫اسلمایسشہ واقعات سشہ شبہششریپڑیششش ہہ جن میں دوسرش ہ‬ ‫ت دین ک اشہشم عنصر بنگئیشہ‬ ‫رواداری کا سلوک کیا گیا او ریشہشی اسلمی رواداری‪ ،‬تبلیغ و دعو ِ‬ ‫انشہشی الفاظ اور‬ ‫مسلم کیحدیثششش ہہ اور امام بخاری نشہ ش ہبششی‬ ‫کیاشششش ہہہ‬ ‫بیان‬

‫مفشہشومکشہسات شہ ذرا مختصرًااسشہ‬ ‫اس ی‬

‫شریرشہ روایتکرتشششہ ہیںکشہ رسولاللشہ صلیاللشہعلیشہ وسشلمنششہ ایشک لششکر نجشد کشی‬ ‫تہ‬ ‫حضرابوش‬

‫ل لشکربنوحنیفشہکشہ ایک شخص کو جس کا نامثمشامشہ بشن‬ ‫طر ب‬ ‫فشہشیجاشہ شاشہ ِ‬

‫لیمشامشہ کشا‬ ‫تششا اور جشوہ‬ ‫اثشالہ‬ ‫اشش ِ‬

‫سردا رتہششا‪ ،‬پکڑ کرلئشششہہ لشکروالوںنشہاسشہ مسجدکشہ ایک ستونسشہباندشہدیاشہ رسولاللششہ صشلیاللششہعلیششہ‬ ‫کیشاششش ہ ہ؟ثمشامشہنششہ جشواب دیشا‪:‬اشہ محمشد‪،‬میشر شہ پشاس‬ ‫پوچششا‪:‬تیشرشہ پشاس‬ ‫ادشہشرسشہگزرش ہوا تو اس سش ہ شہ‬ ‫وسلم ک ُ ا‬ ‫شلئیشششش ہہہ اگر آپمجشششہہ قتل کریںگشہ تو ایکایسشہ شخص کو قتل کریںگشہ جو قتشلکیششہجشان شہ کشا مسشتحق‬ ‫بش ہہ‬ ‫ہہ‪ ،‬اور اگر انعام کریں گہ تو ایک ایسہ شخص پر انعام کریں گہ جو شکرگزاری جانتا ہہ‪ ،‬اور اگر آپ مال‬ ‫کشہ طلبگارش ہیں تو حکمدیجی شہ جوکچشہ مانگیں آپ کوملشہگاشہ‬ ‫رسولاللشہ صلیاللشہعلیشہ وسلمنشہاسشہ اسی حالت‬

‫شگئشششہہ‬ ‫چشہشوڑ دیا اورآگشہبڑشہ‬ ‫می ں‬

‫وشہشی سوال کیا‪:‬اشہثمامشہ!تیرشہ پاسکیاششش ہہ؟‬ ‫دوسرا دن آیا تو آپ صلیاللشہعلیشہ وسلم نشہ شہپش ر‬ ‫وشہشی جو میںکشششہہچکاش ہوںشہ اگر آپ انعام کریںگشہ تو ایشک ششکرگزار ششخص پشر انعشام‬ ‫کش‪ :‬ا‬ ‫ثمامشہ نشہ شہ‬ ‫ققتلش ہوں‪ ،‬اور اگر آپ‬ ‫کریں‬ ‫گشہش‪ ،‬اور اگر قتل کا حکم دیںگشہ تو میں مستح ِ‬ ‫ہوگا ادا کیا جائہ گاہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ‬

‫شتہشششہ ہیشں تشو جشو حکشم‬ ‫ماچشاشل‬

‫وسلمہ پنہر کوئی کارروائی نہ کی اور آگہ بڑہ گئہہ تیسرا‬

‫کششا‪:‬ثمشامشہ‬ ‫ل لششکر سشہ شہ‬ ‫دشہشرایاگیاشہ آخرکار رسولاللشہ صلیاللشہعلیشہ وسلم نشہ شہ‬ ‫دن آیا توہپشریشہشی مکالمشہ ش‬ ‫اشش ِ‬ ‫چشہشوڑدوشہ‬ ‫کو‬ ‫ہرشہشائیکشہ بعدثمامشہ مسجدکشہ قریب‬

‫پششر‬ ‫وشہشاں اسن شہ غسل کیشاشہ شہ‬ ‫کشہشجورکشہ درختکشہ پاس گیاشہ ش‬ ‫ایک‬

‫گشواشہشی‬ ‫ول ُشہ ’’ میش ں‬ ‫ہہ‬ ‫وا ْ ش‬ ‫لہہ َا ِ ّ اللّلش َُ‬ ‫ش‪:‬ش َہدُ َان ّا ِلش‬ ‫مسجد میںداخلش ہوا اور اعلن کی ا َ ْا‬ ‫دا َ‬ ‫شششَہدُ ا َ ّ‬ ‫مش ً‬ ‫م َ‬ ‫وہَر ُ‬ ‫ح ّ‬ ‫ن ُ‬ ‫سش ��‬ ‫عبشدُش َ‬ ‫دیتا ش ہوںکشہاللشہکشہ سوا کوئی معبو دنشہشیں اوریشہکشہ محمد اسکشہبندشہ اوررسولش ہیںش‘‘ہ‬


‫کشہشا‪:‬اشہ محمد! خشدا کشی قسشم! اس‬ ‫ہہشرثمامشہنشہ رسولاللشہ صلیاللشہعلیشہ وسلم کو مخاطب کر کشہ ش‬ ‫پش‬ ‫زمین پر‬

‫چششروںسششہ‬ ‫چششرشہ دنیشاکششہ تمشا مہ‬ ‫ل نفرت نشہ شتشہشا اور اب آپ کش اہ‬ ‫شرشہ آپ کشہچ شہ‬ ‫کوئیہ‬ ‫چش‬ ‫شرشہسشہزیاد شہ قاب ِ‬

‫ششمحبوبشششش ہہہ خدا کی قسم! آپکشہ دینسشہزیادشہ کوئی‬ ‫شمجش ہہ‬ ‫زیادشہ‬

‫تششا اور‬ ‫ل نفشرت نشہ شہ‬ ‫دینبشہشیمیرشہلیششہ قابش ِ‬

‫ششہشرسششہزیشاد شہ کشوئی‬ ‫محبوبشششش ہہہ خدا کی قسم! آپ کشہ ش‬ ‫اب آپ کا دین دنیاکشہ تمام ادیانسشہزیادشہمیرشہلیشہ‬ ‫مجشششمحبشوبشششش ہ ہہ‬ ‫ہہ‬ ‫ششہشروںسشہزیاد شہ‬ ‫ششہشر دنیاکشہ تما م‬ ‫ششربشہشیمیرشہلیشہ نفرت انگیزہ نششیںتشہشا‪ ،‬اور اب آپ ک ا‬ ‫ہ ہ‬ ‫شاشہ اب آپ کا کیاحکمششش ہہ؟‬ ‫ررشتشاہ‬ ‫شمجشششہہ اس حالت میں آلیاکشہ میںعمرشہ کاارادش ہ ک ہ‬ ‫آپک شہ لشکرنشہ‬ ‫شکرلشششہہ جشبوشہمکششہ‬ ‫رسولاللشہ صلیاللشہ وسلمنشہاسشہ خوش خبری دی اور اجازت دیکششہوشہعمشرشہ‬ ‫واپس آیا تو اسکشہ‬

‫شوگیاششش ہ ہ؟ اسنششہ جشواب دیش‪ :‬انشہشیشں‪،‬بلکششہ‬ ‫کشہشا‪ :‬کیا تو صابی )بشہدینش( ہ‬ ‫ساتہششیوں نشہ ش‬ ‫مشر ک‬

‫میں رسولاللشہ صلیاللشہعلیشہ وسلم پر ایمانلشہ آیا اورمسلمانش ہوگیاش ہوںشہ‬

‫امن و سلمتی کا قیام‬ ‫شلشہ بحث کیجائشہ جو‬ ‫پرہ‬ ‫شناگزیرششش ہہکشہ قرآن کریم کی ُان آیات پش‬ ‫ر امن پر گفتگوکشہلیشہ‬ ‫اسلمکشہ تصو ِ‬ ‫ت سشیف )‪ (sword verses‬کا نام دیا‬ ‫جنگ و جدال کو موضوعبناتیش ہیں او جن‬ ‫رشہشیں مغربی مصنفیننشہ آیشا ِ‬ ‫ہہہِان آیات‬

‫تمامہلوؤں‬ ‫پ‬ ‫ںسہترین انتخاب سورہ انفال کی ‪ ۵۵‬تا ‪ ۶۱‬آیتیں ہیں کیونکہ یہ موضوع کہ‬ ‫می ہب‬

‫کااحاط شہکرتیش ہیں‪:‬‬ ‫جنششوںنششہ حشق کشو‬ ‫یقین ًااللشہکشہ نزدیک زمین پرچلنشہ والی مخلوق میں سبسشہ بدتروشہلشوگش ہ یش ںہ‬ ‫شیشںش ہیشںشہ ان میشںسششہو شہ لشوگ جشنکششہ‬ ‫تیشارہ‬ ‫نش‬ ‫مانن شہسشہ انکار کر دیا ‪،‬پشہشر کسی طرحوشہاسشہ قبولکرنششہ پشر‬ ‫شدشہ کی اپہششروشششہ ہر موقع پر اس کوتوڑتشششہ ہیں اور ذرا خدا کا‬ ‫معاشہ‬ ‫سات شہ تو نش ہ‬

‫فنشہشیںکرتشششہہ پسیشہ لوگ اگر‬ ‫خو‬

‫تمشہشیں لڑائی میں مل جائیں تو ان کی ایسی خبر لوکشہ انکشہ بعددوسشر شہ جشو لشوگ ایسشی روش اختیشار‬ ‫ہہ‬ ‫بدعششہشدوںکشہ اس انجامسشہوشہ سبق لیںگشششہہ اور اگشر‬ ‫شتوقعششش ہہ کش ہ‬ ‫شوالشششہ ہوں ُانکشہ حواسباختشششہ ہوجائیںشہ‬ ‫کرنش ہ‬ ‫معاششدشہ کشوعلنیششہ اسکششہ آگشہ شپشہشینشک دو‪ ،‬یقینشا ً‬ ‫یہششیں کسی قومسشہ خیانت کااندیششششہ ہو تو اس کش ہ شہ‬ ‫کبش تم‬ ‫ہ ہہ‬ ‫اللشہ خائنوں کو پسن دنشہشیںکرتاشہ منکرین حق اس‬ ‫شاں‬ ‫جش ہ‬ ‫کوش ہ ر انہششیںسکتشہ اور تم لوگ ‪،‬‬

‫شارا‬ ‫کش ہ‬ ‫ت تم‬

‫ششیقینشًاوشششہ ہ م‬ ‫بشازیلششگئش ہہ‬ ‫ہ‬ ‫رشہشیںکششہوشہ‬ ‫فشہشمی میں نشہ ش‬ ‫غلط‬ ‫شنششہوالششہ‬ ‫بسشہش‪،‬زیشاد شہسششہزیشاد شہ طشاقت اور تیشاربنشد شہہرشہ‬ ‫چل‬

‫رکششوتشاکشہ اسکششہذریعششہسششہاللششہکششہ اوراپنششہ دششمنوں کشو اور ُاندوسشرشہ‬ ‫شیش اہ‬ ‫شوڑش ہُانکشہمقابلشہکشہ لیشہ شمشہ‬ ‫گشہ ہ‬


‫شیں‬ ‫جنشہ‬ ‫دشمنوں کو خوفزدشہ کرد و‬ ‫گشہ اس کا پورا پورا‬

‫جانتاشششش ہہہاللشہ کیراشہ میں جوکچ شہ تم خشرچ کشرو‬ ‫تمنشہشیںجانتشہ مگراللشہ‬

‫شساتشششہ ہرگشز ظلشمنشششہ ہوگشا شہ اوراشہ نشبی! اگشر‬ ‫شارشہ‬ ‫رہ‬ ‫لشہشاری طرف پلٹایاجائشہ گا اوتمش‬ ‫بد تم‬

‫دشمن صلح وسلمتی کی طرفمائلش ہوں تو‬

‫لیششآمشادشششہ ہوجشاؤ اوراللششہ پشربشہشروسشاکشروشہ‬ ‫تمبشہشی اسکشہ ہ‬

‫والشششش ہہہ )انفال ‪۸:۵۵‬ہ‪(۶۱‬‬ ‫اوشہشی سبکچشہسننشہ اورجاننشہ‬ ‫یقینہ ًہہ‬ ‫ہہ ہہ‬ ‫علمانشہ صراحتکیششش ہہکشہ قرآن‬

‫جشہشاں‬ ‫می ں‬

‫جشہشاد کا حکم دیاگیاششش ہہ اور مخالفوں کو سشختی‬ ‫قتال و‬

‫ز اسشلمسششہ رسشول‬ ‫سشہکچلنشہ کی تاکید کیگئیششش ہہ‪ :‬اسسشہ مرادوشہ کفار ومشرکینش ہ ی ںہ‬ ‫جنششوںنششہ آغشا ِ‬ ‫اکرم صلیاللشہعلیشہ وسلم اور آپ پر ایمانلنشہوالشہصحابشہ کرام‬ ‫تمام بنیادی حقوقسشہ‬

‫انشہشیںمکشہ میں‬ ‫کیبشہشرپور مخالفت کیشہ ش‬

‫مشہشا اور اپنیریششہ دوانیوںسششہ اسشلم کشوکچلنششہ کشی سشازشکشیشہاپنششہ‬ ‫محرو رک‬

‫مسلسلظالمشانشہ اقشداماتسششہ مسشلمانوں کشو مجبشور کشر دیشاکششہوشہ ‪۶۱۵‬ءششہ‪۶۱۶‬ء میشںحبشششہ کشی طشرف‬ ‫ہجرت کریں اور‪۶۲۲‬ء میں اپنا وطن ترک کرکشہ مسشتقل طشورسششہمشدینشہمنشورشہ کشو اپنشا مسشتقربنشائیںشہ‬ ‫ہہہشوںن شہ مسلمانوں کو ایکاندازشہکشہ مطابق ‪۹۰‬‬ ‫انش‬

‫جنگیہموں‬ ‫م‬

‫ںہنسایا جن میں سہ ‪ ۲۷‬جنگوں کی‬ ‫میپ‬

‫قیادت رسول اکرم صلیاللشہعلیشہ وسلم کو خود کرناپشڑیشہاگرچششہ ان‬

‫مشہشمشوں میشں دششمنوںکششہ‬ ‫جنگشی‬

‫ُ‬ ‫ن جنگ کییشہ مسلسل کیفیت کفار و مششرکین‬ ‫شیدش ہ‬ ‫نہ‬ ‫کل ‪ ۲۱۶‬افراد مارہ گئہ اور ‪ ۱۳۸‬مسلماشش‬ ‫شوئشششہہ اعل ِ‬ ‫شوپیش ہ‬ ‫کی جانب سشہتشہ‬ ‫کششہ ‪ ۱۳‬سالہ دور‬

‫تششاشہ اسکششہ بشاوجودم ّ‬ ‫کششہ‬ ‫وئیتشہشی اور مسلمانوں کواپنشہ دفاع پر مجبور کر دیا گیش اہ‬

‫تاکیدہی کہ ظلم کہ جواب‬ ‫ت‬ ‫میںہیں سخت‬ ‫ان‬

‫می ہںتہ یار ہُاٹنہائیں‪:‬‬

‫فش ْٓ‬ ‫م کُ ّ‬ ‫زکشاوش َہ )النسشاء ‪ (۴:۷۷‬تم ن ہُان‬ ‫و ا ہُتشوال ّ ہ‬ ‫صشلہ‬ ‫وا َ ِ‬ ‫ن ِ‬ ‫وا ا َْیش ِ‬ ‫م ت ََر ا َِلشی اّلش ِ‬ ‫ذی ْ َ‬ ‫قی ْ ُ‬ ‫قْیش َلَلششُہ ْ‬ ‫ا َل َ ْ‬ ‫مواال ّ‬ ‫موش َہ َ‬ ‫دی َک ُ ْ َ‬ ‫رہدو شہ‬ ‫شاپنشششہ ہاتشہ روکش ہرکششہشو اور نماز قائم کرو اوزکوہش‬ ‫کشہشا گی اتشہشاکشہ‬ ‫دیکشہشا جن سشہ ش‬ ‫لوگوں کو بہش ی‬ ‫جششاد‬ ‫رشہشیم و تلقینکشہ راسشتوںسششہ اس قشرآنکششہ ذریعشہ شہ‬ ‫اور دعوت و تبلیغ‪ ،‬وعظ و نصیحت او تف‬ ‫کریں‪:‬‬ ‫َ‬ ‫دا ک َب ِْیشًرا ‪ ) o‬الفرقان ‪ (۲۵:۵۲‬اہ نبی! کافروں کی بات ہ رگز نہ‬ ‫م ِبش ِشہ َہ‬ ‫ن‬ ‫ج َاش ِہ‬ ‫فل َ ت ُطِ ِ ا‬ ‫عْلک ِ‬ ‫جششا ً‬ ‫و َ‬ ‫دْش ُہ ْ‬ ‫ری ْ َ‬ ‫فہ ِ‬ ‫مانو اور اس قرآن کولشہ کر انکشہساتشہ‬

‫جشہشادکروشہ‬ ‫زبردست‬


‫ت مدینہ کہ بعد جب اسلمی ریاست قائم ہوگئی اور رسول اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کو‬ ‫ہجر ِ‬ ‫اعلشی تسشلیم کشر لیشا گیشا تشب ذی‬ ‫ہر‬ ‫قمدینشہکشہ مطابق ُاس ریاست کا بلنزاع حاکم ِ مطلشق اور مقتشد ِ‬ ‫میثا ِ‬ ‫الحجشہیکمش ہجری‬

‫جشہشاد کی اجازت مل سکی‪:‬‬ ‫انشہشیں ظلمکشہ جواب میں مدافعانشہ ش‬ ‫میں‬

‫و َ ب ِا َ‬ ‫م لَ َ‬ ‫دْیر )الحشج ‪ (۲۲:۳۹‬اجازت دہ دی گئی ُان‬ ‫ی‬ ‫و ا ِ ّ النّلش‬ ‫ذی ْ َ ُن‬ ‫ہہ َ ش َ‬ ‫قش ِ‬ ‫ن ل ِل ّ ِ‬ ‫ا ُِذ َ‬ ‫رش ِہ ْ‬ ‫مہ ظُل ِ ُ‬ ‫نن ّش ُ ْ‬ ‫عل ن َ ہ ْ‬ ‫وا َ‬ ‫م ْ‬ ‫یقت َل ُہ ْ‬ ‫ص ِ‬ ‫لوگوں کو جنکشہ خلف جنگ‬

‫قادرشششش ہہہ‬ ‫شیششش ہہ‪،‬کیونکشہوشہمظلومش ہیں‪ ،‬اوراللشہ یقینا ًُان کی مدد پر‬ ‫یہ‬ ‫کجارش‬

‫ن جنگ کیا گیا ہہ اوانرہیں سبق‬ ‫سورشہ انفال کی آیات ‪۵۵‬ہ‪ ۶۱‬میں جن منکرین حق کہ خلف اعل ِ‬ ‫گیاششش ہ ہُانسششہ مشراد مفسشرین کشرام کشی تصشریحاتکششہ‬ ‫شان شہ کا حکم دیا‬ ‫سکہش ہ‬ ‫ہ‬

‫یششوِدمشدینشششہ ہیشںشہ نشبی‬ ‫مطشابقہ‬

‫بشاشہشمی تعشاون کشا‬ ‫انششیکششہ سشاتش ہ ش‬ ‫شلش ہ ُشہ‬ ‫اکرم صلیاللشہعلیشہ وسلمنشہمشدینشہ تششریف آوریکششہ بعشد سشب سشہ پشش ہ‬ ‫شدشہ کی اتشہشا اوریشہ کوشش‬ ‫معاشہہ‬ ‫ہہ‬

‫شیشںشہ‬ ‫رہ‬ ‫تششیکششہ انسششہ تعلقشات خشوش گشوارش‬ ‫کیہ‬

‫مشذشہشبی حیشثیتسششہ‬ ‫دینشی و‬

‫ل ترجیح قراردیشہگئششتہشششہہ مگرمدینشہ کشہ شیشہشودیوں‬ ‫ویسشہ شہ بشییشہشودی اور عیسائی مشرکینکشہمقابلشہ میں قاب ِ‬ ‫انششوںنششہ‬ ‫شلشہ دلسشہ قبولنشہ کیا او رہ‬ ‫شیہ‬ ‫وکبشکش‬ ‫نشہ رسول اکرم صلیاللشہعلیشہ وسلم کی تحریک اور مشن ک ہ‬ ‫شلیشششہ ہمیششہخفیشہوعلنیشہ سازشیںکیشںشہ منشافقوںکششہسشاتشہ‬ ‫شتہشششہ ہوئشہ اثرات و نتائج کوروکنشہکشہ‬ ‫بڑش ش‬ ‫اسلم کشہ‬ ‫ل ایمانکشہ خلف سازبازکیشہ اوس و خزرجکشہ انصاری قبیلوںکشہ درمیان پرانی عشداوتوں کشو‬ ‫مل ک ا‬ ‫رشہ ِ‬ ‫گ بدر کہ بعد جب مسلمانوں کی پوزیشن مزید مضبوط ہ وگئی تو ُان کہ سینوں میں حسد‬ ‫ہوا دیہ جن ِ‬ ‫کی جو‬

‫لیشہشر کعشب بشن اششرف خشودم ّ‬ ‫کششہ گیشا اور اسنششہ‬ ‫شودیوں ک ا‬ ‫شڑکشہشیشہ شیش ہ‬ ‫شلشہسشہ موجو دتشہشی وشہ ش ہبش ُاٹ‬ ‫گہ‬ ‫آپش‬

‫شکشششہہ کر قریشکشہجذبشہ انتقامکوشش ہ وا دی اور آخشر میشںقشبیلشہ بنوقینقشاعنششہ مسشلمان‬ ‫اشتعال انگیزمرثیشہ‬ ‫خواتینسشہ اپنی بستیوں اور بازاروں‬ ‫انشہشوںنشہ جنشگ‬ ‫گئی ت و‬

‫ںشہشاڑ کرنا شروع کر دیا اور‬ ‫م چیشہشیڑچ‬

‫انشہشیں لعنت ملمت کششی‬ ‫جب‬

‫بدعششد اور سازششی دششمنوںکششہ خلف اسشلمی‬ ‫بششیدشششہ ہالشیشہ ایسش ہ شہ‬ ‫کشیہ دششمکشیہ‬

‫ن جنگ‬ ‫حکومت کو کارروائیکرنشہ اور میدا ِ‬

‫انشہشیں سزادینشہ کافیصلشششہ ہواشہ‬ ‫میں‬

‫ن سلوک‬ ‫غیر مسلموںکشہساتش ہ ُ‬ ‫حس ِ‬ ‫ن جنگکرنشہکشہلیشہ‬ ‫مجرد کفر اور شرک کسیکشہ خلف اعل ِ‬

‫شیںشششش ہہہ کسی شخصکششہ خلف‬ ‫کافیہ‬ ‫نش‬

‫ُپرتششدد کشارروائی اور طشاقت کشا اسشتعمال ِاس بنشا پشرنشہشیشں کیشا جاسشکتاکششہوشہ‬

‫شیشںششش ہ ہ اور‬ ‫مسشلمانہ‬ ‫نش‬

‫فقششا کشا‬ ‫اعتقشادشششش ہ ہہ پشوری اسشلمی تاریشخ میشں اس پشرعلمشاشہ کشرام‪ ،‬محشدثین او رہ‬ ‫کفروشرک پر ُاس کا‬


‫ششش ہہہ اسی طرح کسی شخص کو بزور یا طاقتکشہ استعمالسشہ دین اسلم میں‬ ‫اتفاقہ‬ ‫رششاش‬ ‫شاں‬ ‫جاسکتا شہبلکشہ قرآن تویشہ‬ ‫ظلمکرنشہ والوں میںوشہ‬

‫شتاششش ہہکشہ جو‬ ‫تکہ‬ ‫کش‬

‫ل ایمانکششہسشاتشہ‬ ‫غیرمسلماشہ ِ‬

‫داخلنشہشیں کیششا‬

‫ںشہشتشا اور ُان پشر‬ ‫عشداوت نہششیش رک‬

‫جشائشہش‪ ،‬اور عشام انسشانی حقشوق کشی‬ ‫ا‬ ‫اچششا برتشاؤ کیش‬ ‫شیںششش ہ ہُاسکششہ سشاتشہ شہ‬ ‫شامشلہ‬ ‫ن‬

‫ن‬ ‫ادایگیکشہمعاملشہ میں مسلمان اور غیرمسشلم میشں فشرقنششہ کیشاجشائشششہہایسششہ لشوگ مسشلمانوںکششہ حسش ِ‬ ‫سلوککشہمستحقش ہیں‪:‬‬ ‫جنششوں‬ ‫شیں ِاس بات سشہ شنشہشیں روکتاکشہ تم ُان لوگوںکشہساتشہ نیکی اور انصاف کا برتاؤ کر وہ‬ ‫اللش ہتمششہ‬ ‫نشہ دینکشہمعاملشہ میں تمسشہ‬

‫نکالشششش ہہہاللششہ انصشافکرنششہ‬ ‫گشہشروں سشہ شنشہشیں‬ ‫ںشہشارشہ ش‬ ‫رتمششی تم‬ ‫ہ‬ ‫جنگنہششیںکیششش ہہ او‬

‫کرتاشششش ہہہ)الممتحنشہ ‪(۶۰:۸‬‬ ‫والوں کو پسند‬

‫محّبتوں کی بستی‬ ‫اسلم افرادکشہ ضمیر میشں‪ ،‬خانشدانی نظشام میشں‪ ،‬ملکشی قشانون میشں‪ ،‬بیشن القشوامی تعلقشات و‬ ‫شتشاشششش ہ ہہ‬ ‫شلنشش اہ‬ ‫روابطمیں‪،‬ش ہرجگشہ زندگیکشششہ ہرشعبشہ میں امن و سلمتی اور محبت و اخشوت کشہ شہ پششولکشہچا‬ ‫باشہشمی معاملت کی استواری اور انکششہ درمیشان‬ ‫جناب رسولاللشہ صلیاللشہعلیشہ وسلمنشہ مسلمانوں کش ہ ش‬ ‫مشہشوگشہکشہ مسلمانوںکششہ درمیشان محبشت‪،‬‬ ‫ُالفت او ربشہشائیچارشہکشہ فروغ کی مثالدیتشششہ ہوئشہ فرمایا ‪ ’’ :‬ت دیک‬ ‫مانندشششش ہہہ جب اسکشہ کسشیحصششہ کشوتکلیشفشش ہ و‬ ‫ایکدوسرشہ پر رحم اور شفقت کی مثال ایک جسم کی‬ ‫وجاتاشششش ہہ‘‘ہ )بخاری‪ ،‬کتاب الدب‪ ،‬حدیث ‪(۲۷‬‬ ‫تو سارا جسم بخار اوربشہ خوابی میںمبتلش ہ‬ ‫’’شہ مسلمانو! ایکدوسر شہسش ہُبغض نش ہرکششہشو‪ ،‬آپس میشں‬ ‫رسولاللشہ صلیاللشہعلیشہ وسلمنشہ فرمایا‪ :‬ا‬ ‫شائی‬ ‫شیروشہاشہاللشہکشہ بندو ‪،‬ہ بششائیبشہ‬ ‫حسدنشہ کرو‪ ،‬ایکدوسر شہسشہمنشہ نشہپ شہ‬

‫شوش‘‘ہ )بخاری(‬ ‫نہ‬ ‫بکررش‬

‫مشہشیمنبتاتاششش ہہ اور بار بار قرآن کریم میں تکششرار‬ ‫اللشہ اپنی صفت رحمن‪ ،‬رحیم‪ ،‬سلم‪ ،‬مومن او ر‬ ‫شکرتاششش ہہتاکشہ اسکشہ بندوں میں اس کا‬ ‫حسنیش کاتذکرشہ‬ ‫کشہسات شہ ان اسماش ہ ہ‬

‫دکششائیدشششہہ رسشول اکشرم‬ ‫عکشسہ‬

‫ن خصوصی کا ذکرکرتاششش ہہکشہوشہ رحیم‪ ،‬نرم خشو‪ ،‬ششفیق‬ ‫صلیاللشہعلیشہ وسلم پر اللش ہ ہ ش‬ ‫تعالیاپنشہ اس احسا ِ‬ ‫شربانش ہیں‪:‬‬ ‫رہ‬ ‫اومش‬


‫غل ِی ْ َ‬ ‫ف ّ‬ ‫ظا َ‬ ‫وِلش َ‬ ‫ب َلن ْ َ‬ ‫ظ ال ْ َ‬ ‫ت َ‬ ‫َ‬ ‫عمشرن ‪ (۳:۱۵۹‬اہ‬ ‫ل‬ ‫ہ‬ ‫ک ) ہا‬ ‫نہہ ِل ِن ْ َتل َش ُ ْہ‬ ‫م َالل ّش‬ ‫ف ّ‬ ‫وا ِ‬ ‫ن َ‬ ‫ماَر ْ‬ ‫و ک ُن ْ َ‬ ‫م ْ‬ ‫مش ٍ ہ ّ‬ ‫ح َ‬ ‫فب ِ َ‬ ‫قل ْ ِ‬ ‫ح ْ‬ ‫ض ْ‬ ‫و لَ ْ‬ ‫م َ‬ ‫کشہشیشں تشم‬ ‫واقشعششوئشششہ ہ وورنششہ اگش ر‬ ‫ہ‬ ‫پیغمبر!یشہاللشہ کی بڑیرحمتششش ہہکشہ تم ان لوگوںکشہ لیشہ شبشہشت نشرم مشزاج‬ ‫چشہشٹجاتشششہہ‬ ‫شارشہ گردوپیش سشہ ش‬ ‫بہ‬ ‫ُتندخو اور سنگدلش ہوتشہ تویش ہ ستمش‬ ‫عل َی ْ ُ‬ ‫ن ا َن ْ ُ‬ ‫لَ َ‬ ‫م ْ‬ ‫و ٌ‬ ‫م‪o‬‬ ‫ن َر ُ‬ ‫جآ َ‬ ‫ص َ‬ ‫مشا َ‬ ‫زْیشٌز َ‬ ‫م َ‬ ‫ف ّر ِ‬ ‫و ٌ‬ ‫ؤ ِ‬ ‫ف ِ‬ ‫م َ‬ ‫قد ْ َ‬ ‫م َر ُ‬ ‫من ِی ْ َ‬ ‫مش ْ‬ ‫حْیش ٌ‬ ‫م ِبشال ْ ُ‬ ‫کش ْ‬ ‫عن ِّتش ْ‬ ‫عل َْیششِہ َ‬ ‫سشک ُ ْ‬ ‫ل ّ‬ ‫ء کُ ْ‬ ‫رْیش ٌ‬ ‫ء ْ‬ ‫س ْ‬ ‫ح ِ‬ ‫ع ِ‬ ‫ہہ ہو‪ ،‬تم لوگوں کہ پاس ایک رسول آیا ہہ جو خود تم ہ ی‬ ‫دیک‬ ‫)التوبہ ‪ (۹:۱۲۸‬ہ‬

‫تمہ ارا نقصان‬ ‫س ‪،‬‬ ‫می ںہ ہ ہ‬

‫رحیمشششش ہہہ‬ ‫شحریصششش ہہ‪ ،‬ایمانلنشہ والوںکشہلیشہوشہ شفیق اور‬ ‫میں پڑنا ُاس پرشاق ش ہہش تم‪،‬شہشاری فلح کاوشہ‬ ‫ی شہ‬

‫مشہشربانی اور شفقت‬ ‫رحمت و‬

‫انسانش ہیںخواشہوشہ‬

‫ل اسلمکشہلیشہ‬ ‫صر‬ ‫فاشہ ِ‬

‫شوالشششہ ہوں اور‬ ‫یشہشبکشہماننشہ‬ ‫کس مذ‬

‫شیشںششش ہ ہ‪،‬اسکششہ مخشاطبسشارشہ‬ ‫مطلشوبہ‬ ‫نش‬

‫باششندشششہ ہوںشہاللششہکششہ رسشولنششہ‬ ‫کسیبشہشی ملککششہ‬

‫ارشاد فرمایا‪’’ :‬زمین والوں پر رحم کرو‪ ،‬آسمان وال تم پر رحمکرشہگاش‘‘ہ )ترمذی(‬

‫مذاشہشب کا احترام‬ ‫دیگ ر‬ ‫شارن شہ کی ِاسس شہ آخری حد کیا‬ ‫وہ‬ ‫مشہشربانیکشہ جذبات کُابش‬ ‫کسی انسانکشہ اندر رحمت و شفقت او ر‬ ‫ہوسکتی ہہ؟ یہ کارنام ہُاسی عقیدہ کا ہوسکتا ہہ جو خالق کی وحدانیت اور مخلوق کی وحدت پر ایمان‬ ‫تعشالیش کشا‬ ‫فرمایاششش ہ ہ‪’’ :‬سشاری مخلشوق اللش ہ ہ‬ ‫شتا ش ہوشہ رسول اکرم صلیاللشہعلیشہ وسلمنشہ اسیلیشہ اعلن‬ ‫رکہشہ‬ ‫ہ‬ ‫ششخصششش ہہ جو ُاسکشہ خانشدانکششہسشاتشہ‬ ‫خاندانشششش ہہہ تمام لوگوں میںاللشہکشہ نزدیک سبسشہزیادشہ محبوبوش ہ‬ ‫ابویعلی‪ ،‬والبزاز باسناد ضعیف(‬ ‫ن سلوککرشششہ‘‘ہ )رواش ہ ہش‬ ‫ُ‬ ‫حس ِ‬ ‫شتہشششہ ہیںکشششہ ہمشارشہ قریشبسششہ ایشکجنشازشہ گشزرا تشو نشبی اکشرم صشلیاللششہعلیششہ‬ ‫حضرت جابر عبداللشہکش ش‬ ‫شرش ہمنشہ گزارش کی‪ :‬یارسولاللشہ!یششہ تشو‬ ‫شڑہشششہ ہوگئ شہہپشہ‬ ‫شی‬ ‫شڑہشششہ ہوگئشہ اورشہ شمہ بشکش‬ ‫وسلم‬ ‫کش‬

‫یششودی کشاجنشازشہ‬ ‫ایشکہ‬

‫دیکششہشو تششو‬ ‫شا شہ حضور صلیاللشہعلیشہ وسلمنشہ ارشاد فرمایا‪ :‬کیایشہ ایک انسانی جان نشہ شتشہشی؟ جب تم جنازش ہ‬ ‫تشہہ‬ ‫کشہشڑہشششہ ہوجاؤشہ )بخاری(‬

‫ق نسواں کا تحفظ‬ ‫حقو ِ‬


‫چشہشٹی صدی عیسوی میں مرد اور عورتکشہ درمیان فشرق و امتیشاز کشو ختشم کشرکششہ‬ ‫قرآن کریم نشہ ش‬ ‫اٹشہشایشاوشہ اتنشا انقلب آفریشں‬ ‫ہہہشیں یکساں عزت و احترام اور وقار و تمکنتسشششہ ہم کنارکرنشہ کا جو قد م‬ ‫انش‬ ‫ہہشاکشہ اسکشہنتیجشہ میں فکرونظر کیدنیاش ہی بدلگئیشہ عورت کشی حیشثیت اور مقشام ومرتبششہکششہ تعیشن‬ ‫تش‬ ‫میں اسلمنشہ‬

‫چشہشوڑدیاشہ اسشلمکششہسشایشہ میشں عشورتکششہبشارشہ میشں مشردوں کشا پشورا‬ ‫مشہشب کوپیچ شہہ ش‬ ‫تما مذا‬

‫نقط شہ نظر اور عملیرویشہ بدل گیا‪ ،‬اور رسول اکرم صلیاللشہعلیشہ وسشلم کشی بعثشتکششہ بعشد خشواتیننششہ‬ ‫ایک نئی تاریخ رقم کی جس کی‬

‫نششاد ترقشییشافت شہ دور میشں‬ ‫تششی اور آجکششہ نشامہ‬ ‫لشہشلشہ شبشہشی موجود نشہ شہ‬ ‫مثا پ‬

‫ناپیدشششش ہہہ قرآننشہپورشہ زورو شورسشہ اعلن کیا‪:‬‬ ‫ہہشی‬ ‫بش‬ ‫لوگو‪،‬اپنشہ ربسشششہ ہرو جسنشہ تم کو ایک جانسشہ پیدا کیا اور ُاسی جانسشہ اس کا جوڑا بنایششا اور‬ ‫ُان دونوں سشہ شبشہشت مرد و عورت دنیا‬

‫میںپشہشیلدیششش ہہُاس خداسشششہ ہرو جس کاواسطشہدشہ کر تشم ایشکدوسشر شہ‬

‫پرشہشیشزکشروشہ یقیشن جشانوکششہاللششہ تشم پشر‬ ‫سشہ اپنا حقمانگتشششہ ہو اوررشتشہ و قرابتکشہ تعلقات کوبگشاڑن شہ سش ہ ش‬ ‫ششش ہہہ)النساء ‪(۴:۱‬‬ ‫رہ‬ ‫نگرانی رکششاش‬ ‫پیشداکیششگئشششہ ہیشں اسلیشش ہُان میشں‬ ‫ہ‬ ‫قرآننشہ صراحت کر دیکشہ مرد اور عورت دونوں ایک جشانسششہ‬ ‫ذلیشلشششش ہ ہہ دونشوں‬ ‫شیںشششش ہہہنشہ مردافضلششش ہہ اورنشہ عورت حقیشر اور‬ ‫سشہ کوئی برتر یا کم نشترہ‬

‫کشیاشہشمیشت اور‬

‫مذاششہشبکش ہِاس خیال کی تائی دنشہشیں کرتاکشہ مشرد کشیبششہ نسشبت عشورت‬ ‫ایکشششش ہہہ قرآن دوسرش ہ‬ ‫مقام ومرتبشہ‬ ‫گیاشششش ہہہ‬ ‫کو ایک حقیرمادشہسشہ پیدا کیاگیاششش ہہ اور عورت کو کم تر مقام اور طفیلی کادرجشہ دیا‬ ‫بششی‬ ‫رششاششش ہ ہ اور اس کشی نششانیاں آجہ‬ ‫رزشربشہشرا تصور ماضشی میشں موجشو دہ‬ ‫عورتکشہ خلف ایک او ہ‬ ‫جشڑشششش ہ ہہ اس تصشورکششہ‬ ‫کلسیکی ادب میںموجودش ہیں‪،‬وشہیششہکششہ عشورتگنشاشہ کشی‬

‫مردششرگنشاشہسششہ‬ ‫مطشاب قہ‬

‫دیتیشششش ہہہ ان حضراتکشہ مطشابق ششیطان‬ ‫شعورتششش ہہ جو اس کوگناشہکشہراستشہپرش ہال‬ ‫پاکشششش ہہہیشہ‬ ‫محفوظ اور‬ ‫ورغلتشاشششش ہ ہہ‬ ‫براش ِہ راست مرد کو گمشراشہ شنشہشیشںکرسشکتاشہوشہ عشورت کشوواسشطشہ بنشاکر مشرد کشو‬ ‫دیشتیشششش ہ ہہیششہ‬ ‫تگناشہ‬ ‫کوہ‬ ‫عورت پش‬ ‫شسلتاششش ہہ او رپشہشر عورت مرد کو دعو ِ‬ ‫شاشہ اس‬ ‫انشہشیں جنتسشہ نکلنا پڑتشاہ‬ ‫ورغلی اتہششا اورنتیجشہکشہ طور پ ر‬

‫شلششہ‬ ‫نہ‬ ‫ششیطاپش‬

‫شتشششہ ہیشںکششہ آدم کشو ششیطاننششہ‬ ‫لشوگہ‬ ‫کش‬

‫میںبشہشیحواش ہیواسطشہ‬

‫شیںشہ‬ ‫یہ‬ ‫بنتش‬

‫شوئشششہ ہیششںشہ‬ ‫قرآننشہ ان تمام نظریات کی تردید کی اور اعلن کیاکشہسارشہ انسان ایک جانسشہپیداش ہ‬ ‫کاششش ہ ہنششہ نیچشی ذات‬ ‫ایکشششش ہہہ پیدایشی طور پرنشہ کوئیشریفششش ہہنشہ رذیل‪،‬نش ہُاونچی ذات‬ ‫ان سب کی اصل‬


‫شبرترششش ہہنشہ کمترشہسارشہ انسانبرابرش ہیںشہ خاندان قبیل‪،‬شہش‪ ،‬رنگ و نسل‪ ،‬ملک و قوم‪ ،‬زبشان‪،‬پیشششہ اور‬ ‫کا‪،‬نشہ‬ ‫غلطشششش ہہہ‬ ‫صنف کی بنیاد پر ُانکشہ درمیان کوئی تفریق کرنا‬ ‫شکرتاششش ہہ تویشہ‬ ‫قرآن جب حضرت آدمکشہقصشہ کاتذکرشہ‬ ‫حوا کوگمراشہ کیا اور حوا آدم‬

‫تسلیمنشہشیشں کرتشاکششہ ششیطاننششہ یشا سشانپنششہ‬

‫کرتشاششش ہ ہ‬ ‫گمراشہشی کا سبببنیںشہوشہ ایکالشگشش ہ ی منظشر کشانقشششہ پیشش‬ ‫ک ی‬

‫دشہشوکشا دیشا اور دونشوں‬ ‫جس میں آدم و حوا دونوں برابر کیذمشہ دارشخصیتش ہیںشہ شیطاننشہ دونشوں کش و‬ ‫پششلچکششہلیشاشہاللششہ کشی نافرمشانیکرنششہ کشیوجششہسششہ‬ ‫انشہشوںنشہممنوعشہ درخت کش اہ‬ ‫کشہشاگئشہ او ر‬ ‫شدششوک ا‬ ‫اس سشہ ہ‬ ‫دونوںسشہ خدا کی‬

‫ُ‬ ‫انشہشیں خوداپنشہ نفسک شہحوالشہ کردیا‬ ‫کشہشول دیا گیا او ُر‬ ‫اٹشہشا لی گئی‪ُ ،‬ان کا پردشہ ش‬ ‫حفاظت‬

‫انششوںنششہ‬ ‫گیاکشہ اپنیپردشہ پوشی کا انتظام خودکریںشہ جب ُان دونوں کو اپنی غلطی کااحساس ش ہوا ت وہ‬ ‫شوئشششہہ‬ ‫فور ا ً کسی تاخیرکشہ بغیرتوبشہ و ندامت کیراشہ اپنالیشہاللشہکشہ حضور دونوں معافیکشہ خواستگارش ہ‬ ‫ت ارضیکشہ خشدائیمنصشوب شہ میشں رنشگ‬ ‫اللشہن شہ دونوں کیتوبشہ قبول کی او ر‬ ‫انشہشیں معاف کر دیاشہ شپشہشر خلف ِ‬ ‫شرن شہکشہلیشہ دونوں کو جنتسش ہُاتار کر اس زمین پربشہشیجا گیا اور دونوںنشہ مشل کشر اس کائنشات کشی بشزم‬ ‫بشہہ‬ ‫سجائیششہ‬

‫صنفی تفریق کاخاتمشہ‬ ‫قرآننش ہ‬

‫شلنشہ تصور‬ ‫اسہ‬ ‫جاش‬

‫کیبشہشی بیخ کنی کیکشہ عورت خدا کا قرب‬

‫حاصلنشہشیں کرسکتی‪ ،‬اور‬

‫جشڑشششش ہ ہہ قشرآننششہ پشوری قشوتکششہ‬ ‫شوناششش ہہ‪ ،‬اوریشہکشہوشہ برائی کشی‬ ‫یشہکشہعورتش ہونشہ کا مطلب نصفشیطانش ہ‬ ‫شیںشششش ہہہ اس کی بنیاد تششو‬ ‫لیشہ شہ‬ ‫سات شہ باورکرایاکشہ خدا کا قرب اور جنت میںداخلشہ کسی مخصوص جنسکشہ نش‬ ‫عورتشششہہ‬ ‫ن‬ ‫لصالحششش ہہخواشہ مردنشہکیاش ہو یا‬ ‫عم ِ‬

‫شتاشششہہ‪:‬‬ ‫قرآنہ‬ ‫کش‬

‫ن َ‬ ‫مش ْ‬ ‫م َ‬ ‫مشا‬ ‫م‬ ‫حیششوشہ ً ہ‬ ‫ر ا َ ْ ا ُ ْو ہ‬ ‫ن َ‬ ‫ؤ ِ‬ ‫ع ِ‬ ‫م ب ِا َ ْ‬ ‫زی َشہّنششُ ْ ا َہ ْ‬ ‫ول َن َ ْ‬ ‫حی ِی َّنشہ َ‬ ‫فل َن ُ ْ‬ ‫صال ِ ً‬ ‫ح َ‬ ‫م ٌ‬ ‫م ْ‬ ‫م ْ‬ ‫ن َ‬ ‫رششُہ ْ‬ ‫و ُ‬ ‫حا ّ‬ ‫َ‬ ‫ل َ‬ ‫ج َ‬ ‫طَی َّبش ً َ‬ ‫وشہُش َ‬ ‫نثی َ‬ ‫ج ِ‬ ‫ن ذَک َ ٍ‬ ‫سش ِ‬ ‫َ‬ ‫ن‪) o‬النحل ‪ (۱۶:۹۷‬جو‬ ‫و َ‬ ‫وا ی َ ْ‬ ‫ع َ‬ ‫مل ُ ْ‬ ‫کان ُ ْ‬

‫صہی نیک عمل کرہ گا‪ ،‬خواہ وہ مرد ہو یا عورت‪ ،‬بشرطیکہ ہو وہ‬ ‫شخب‬

‫مومن‪،‬اسشششہ ہم دنیا میںپاکیزشہ زندگی بسر کرائیںگشہ اور )آخرت میں(ایسشہ لوگوں کو ُانکششہ اجشر ُانکششہ‬ ‫ہہشترین اعمالکشہ مطابق بخشیںگشششہہ‬ ‫بش‬


‫ہہشاں قرآن کریمنشہ اس‬ ‫یش‬

‫پرشہشیزگشاری کشی زنشدگیگزارنششہ‬ ‫کیشاششش ہ ہکششہ دیشانت او ر‬ ‫فشہشمی کو رفع‬ ‫غلط‬

‫شلہشششہ ہی ُان کی آخرت سشنورجشاتیشش ہ و مگشر دنیشا میشںوشہ ناکشام و نشامراد‬ ‫والوں کی دنیا ضروربگڑتی ش ہہبشش‪،‬‬ ‫بششتر اجشر اورُاونچششہسششہ‬ ‫بششتر سشہ شہ‬ ‫ل فخر زندگی اور آخرت میںملنشہ والشہ شہ‬ ‫رشہ‬ ‫شتہشششہ ہیںشہ حیا ِ‬ ‫تطیبشہ کییشہ قاب ِ‬ ‫شآراستشششہ ہوگشا شہ اس میشں‬ ‫ن عملسشہ‬ ‫ن ایمان اور حس ِ‬ ‫ُاونچامرتبشششہ ہر شخص کوملشہ گا جو ِاس دنیا میں حس ِ‬ ‫مرد اور عورتکشہ درمیان کوئی‬

‫گئیشششش ہہہ‬ ‫ںشہشی‬ ‫تفریق نہششی رک‬

‫کرتشاششش ہ ہکششہ ان‬ ‫بششن‪ ،‬بیشوی اور مشاں بنشاکر اس کشامرتبششہ اس طشرح بلنشد‬ ‫قشرآن عشورت کشو بیشٹی ‪،‬ہ‬ ‫شوجشاتشششہ ہیشں شہ نشبی کریشم‬ ‫مذشہشبی اور تعلیمی حقوقحاصلش ہ‬ ‫حیثیتوں میں اس کو تمام سماجی‪ ،‬معاشی ‪،‬‬ ‫صلیاللشہعلیشہ وسلمنشہاپنشہرویشہ اور عملسشہ تمام شعبوں میں عورت کشو تمشام حقشوق اس طشرح عطشا‬ ‫کیشہ جس طرح مرد کو عطاکیشہگئششتہشششہہتاکشہ وشہ شبشہشی مرد کی طرحاپنشہ فشرائض کشی ادایگشیمیشںش ہمششہ وقشت‬ ‫کوشاںششششہہہ‬ ‫ر‬

‫فرائض کی فطری تقسیم‬ ‫ک‬ ‫یشہش شہ‬ ‫اس کا مطلب ن‬ ‫شیںششش ہہکشہ مرد اور عورتکشہ فرائصیکساںش ہیںشہ زنشدگیکششہ دو بشازو اور ششری ِ‬ ‫کارش ہون شہکشہ سبب دونوںکشہ بطور انسان یکساں حقوق واختیاراتش ہیں‪ ،‬لیکن عملی میدان میشں دونشوں‬ ‫فشرقششش ہ ہ‪ ،‬اور اس فشرق کشا سشبب دونشوں جنسشوںکششہ جسشمانی‪،‬‬ ‫کشہ کام کی نوعیتاورش ہیئت میں واضح‬ ‫پوشیدششششہ ہہہ شیشہشاںیشہنکتشہ واضح کر دیناضروریششش ہہکشہ ان دونوںکشہ‬ ‫نفسیاتی‪ ،‬طبی اور فطری عوامل میں‬ ‫شیںشششش ہہہیشہ تو دونشوں کشی‬ ‫ون اہ‬ ‫ف کار کا مقصد کسی ایک جنس کا برتر اور دوسری جنس کا کمترش ہ نش‬ ‫اختل ِ‬ ‫الگ الگ قدرتی صلحیتوں‪ ،‬رجحانات‪،‬میلنات‪ ،‬جذبات و محرکشات‪ ،‬اسشتعداد اور فضشیلتوں کشی بشدولت‬ ‫تقسیمکارششش ہہہ شیشہشیوشہ پسمنظرششش ہہ جس میں قرآننشہ خاندان کی معاشی کفالت کیذم شہ داری کشابشوجشہ‬ ‫مردکشہ‬

‫وامبنایاششش ہہ‪:‬‬ ‫شوں پرکشر‬ ‫کندشہ‬ ‫مضبو ط‬ ‫شاشہشش ہہ اوراسشہ نگراں اور ق ّ‬ ‫ف ُ‬ ‫مآ ا َن ْ َ‬ ‫ما َ‬ ‫جا ُ َ‬ ‫م ط )النساء‬ ‫وا‬ ‫ضہش ُ ْ َمہ‬ ‫ہہ‬ ‫سآ ِ‬ ‫ل‬ ‫ن َ‬ ‫ع شَ‬ ‫ف ّ‬ ‫وا ِ‬ ‫و َ‬ ‫علی ب َ ْ‬ ‫ض َ اللّلش بَُ ْ‬ ‫َالّر َ‬ ‫عَلی الن ّ َ‬ ‫نل ِشہ ِ ْ‬ ‫م ْ اَ ْ‬ ‫و بِ َ‬ ‫ء بِ َ‬ ‫وہ ُ‬ ‫م َ‬ ‫ق ْ‬ ‫ض ّ‬ ‫م ْ‬ ‫ق ّ‬ ‫ع ٍ‬

‫وام ہیں‪ ،‬اس بنا پر کہ اللہ ن ہُان میں سہ ایک کو دوسرہ پر فضیلت دی ہ ہ‪ ،‬اور‬ ‫‪ (۴:۳۴‬مرد عورتوں پر ق ّ‬ ‫اس بنا پرکشہ مرداپنشہ مال خرچکرتشششہ ہیںشہ‬


‫ورنشہ قرآن مردوں اور عورتوں کو‬

‫شتاہشششش ہہہوشہ دونوں کو بنی نوع انسشان تسشلیم کرتشا‬ ‫سمجشں‬ ‫یکسا‬

‫ہہ اور دونوں کو یکساں حقوق و مراعات عطا کرتا ہہہ بطور مثال چند‬

‫تہاں نقل‬ ‫آیای‬

‫یہی ہ یں‪،‬‬ ‫ک جار‬

‫جن میں مردوں اور عورتوں کیذمشہ داری واضح کیگئیششش ہہ‪:‬‬ ‫مومن مرد اور مومن عورتیں‪،‬یشہ سشب ایشکدوسشرشہکششہرفیشقش ہ یشں ‪،‬بشہشلئی کشا حکشمدیتشششہ ہیشں اور‬ ‫شدیتشششہ ہیں‪ ،‬اوراللشہ اور اسکشہ رسول صلیاللشہعلیشہ وسلم‬ ‫شروکتشششہ ہیں‪ ،‬نماز قائمکرتشششہ ہیںزکوہش‪،‬ہ‬ ‫ُبرائیسشہ‬ ‫رشششہ ہگشیشہیقینشًاالل شہ سشب پشر غشالب‬ ‫کی اطاعتکرتشششہ ہیںشہیشہوشہلوگش ہیں جن پراللشہ کی رحمتنازلشش ہ وکر‬ ‫داناشششش ہہہ )التوبشہ ‪(۹:۷۱‬‬ ‫اور حکیم و‬ ‫بالیقیں جو مرد اور جو عشورتیںمسشلمش ہیشں‪،‬مشومنش ہیشں‪ ،‬مطیشعفرمشانش ہیشں‪ ،‬راسشتبشاز ش ہیشں‪،‬‬ ‫گشاشہشوں کشی‬ ‫شنششوالشششہ ہیشں‪ ،‬اپنشی ششر م‬ ‫رکشہ ہ‬ ‫دینششوالشششہ ہیشں‪ ،‬روزش ہ‬ ‫ہ‬ ‫شوالشششہ ہیں‪،‬صشدقشہ‬ ‫شکنشہ‬ ‫صابر ش ہیں‪،‬اللشہکشہ آگشہجشہ‬ ‫مشہشیشا‬ ‫شوالشششہ ہیں‪،‬اللشہنشہ انکشہلیشہ مغفشرت اور بشڑا اجش ر‬ ‫شوالشششہ ہیں‪ ،‬اوراللشہ کو کثرتسشہ یادکرنشہ‬ ‫حفاظتکرنشہ‬ ‫ششش ہہہ)احزاب ‪(۳۳:۳۵‬‬ ‫رہ‬ ‫رکششاش‬ ‫ک‬

‫سماجی زندگی میں شرکت‬ ‫گشہشر میں امشن و سشکون کشی افزایشش اور بچشوں کشی دینشی‬ ‫اسلمنشہ عورتوں کی سرگرمیوں ک و‬ ‫انشہشیشں ایشک وسشیع‬ ‫ںشہشا بلکشہ ش‬ ‫تعلیم و تربیت نیز علمی و فکری خدمات تک محدو د نہششی رک‬ ‫تاک شہو شہ‬

‫فراششم کیشا‬ ‫میشدا نہ‬

‫جدوجشہشد میں برابر کی شرکتکرسکیںشہ خواتین جس طرح شعروادب اور علشم و فشنکششہ‬ ‫ی‬ ‫عمل‬

‫ذریع شہ ترقیکرسکتیش ہیشں اسشی طشرحوشہ زراعشت‪ ،‬تجشارت اوردوسشرشہ میشدانوں‬

‫بششیمعاششرشہ کشی‬ ‫میشںہ‬

‫ضرورت اور وقت کی پکارکشہ مطابق اپناحصشہ اداکرسکتیش ہیںشہ‬ ‫شآجاتیششش ہہکشہ آجک شہ جدیششد‬ ‫اسلم میں انسانی حقوقکشہ اس تصورسشہیشہ حقیقتُاجاگرش ہوکرسامنشہ‬ ‫دور‬

‫جششاں حجشاب‬ ‫شیششش ہہ‪،‬نشہکشہ جدید مغرب کشہ شہ‬ ‫میںبشہشی انسانی حقوق کا اگر کوئیضامنششش ہہ تووشہاسلمش ہ‬

‫پر پابندی عائد‬

‫شاسلمششیششش ہ ہ‬ ‫ہ‬ ‫ششش ہہہیشہ‬ ‫دشہششت گردی کی علمت قرار دیا رجششاشاہ‬ ‫شیششش ہہ‪ ،‬اور مساجد ک و‬ ‫یہ‬ ‫کجارش‬

‫کرسشکتاششش ہ ہ اور‬ ‫جوش ہرشخص کو آزادی عطاکرتاششش ہہکشہوشہ کفرواسلم میشںسششہ جشسراشہ کشوچشاشششہہ منتخشب‬


‫شر شہ‬ ‫شیںشہ کیا مغرباپنشہ تمشام تشر جدیشد افکشارکششہسشاتشہ اس رواداری کشمظشاشاہ‬ ‫جبرہ‬ ‫نش‬ ‫اسکشہلیشہ اس پر کوئی‬ ‫کرسکتاششش ہہ؟‬


اسلام میں انسانی حقوق کا تصور